وزیر اعظم عمران خان نے سیرت النبی ﷺ کو بچوں کے سلیبس کا لازمی حصہ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس فیصلے کے تحت آٹھویں، نویں اور دسویں کے بچوں کو سیرت النبی ﷺ پڑھنے اور سیکھنے کا موقع ملے گا۔ عمران خان کے مطابق دنیا مہں کسی کی اتنی اچیومنٹس نہیں ہیں جتنی ہمارے نبی ﷺ کی ہیں۔ انکی ساری زندگی یوم پیدائش سے لے کر ہجرت کرنا، اور وفات تک کے دن تاریخ کا حصہ ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اللہ ہمیں انکی زندگی سے سیکھنے کا حکم دیتا ہے کیونکہ وہ ایک کامیاب ترین انسان تھے ۔ ہمارے بچے بل گیٹس اور سٹیو جابز کی کتابیں پڑھتے ہیں تاکہ ان سے انکی کامیابی کا سبق سیکھیں تو ہمارے نبی ﷺ سے زیادہ کامیاب تو کوئی ہے ہی نہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ سیرت النبی ﷺ پڑھانے سے بچوں کی کریکٹر ڈیویلپمنٹ میں مدد ملے گی۔ ہھر ہمارے بچے کہیں بھی چلے جائیں انہیں سیدھا راستہ پتہ ہو گا۔ عمران خان نے وزیر تعلیم شفقت محمود سے کہا کہ سب سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر سیرت النبی ﷺ کو جلد از جلد اسکولوں میں متعارف کروائیں۔ اس سے پہلے شفقت محمود نے 2023 کی ٹائم لائن دی تھی جس پر عمران خان نے کہا اتنی دیر کرنے کی ضرورت نہیں اور 5 سے 6 ماہ میں سیرت النبی ﷺ کو اسکولوں میں متعارف کروا دیں۔